میں آن لائن کام سٹارٹ کرنا چاہںتا ہوں

میں آن لائن کام سٹارٹ کرنا چاہںتا ہوں ۔۔۔

مجھے بتائیں کیا کروں سینکڑوں کے حساب سے ایسے میسیجز میرے انباکس میں پڑے ہیں۔ اکثر تو میں چیک بھی نہیں کرتا اور بہت سے پڑھ کر اگنور کر دیتا ہوں۔ ہو سکتا ہے ان میں سے ایک میسیج آپ کا بھی ہو اور آپ کو بہت برا لگ رھا ہو اس وقت۔ مگر یہ پوسٹ پوری پڑھئے گا پھر آپ کو سمجھ آئے گی کہ میں یا کوئ بھی کامیاب بندہ آپ کو ریپلائ کیوں نہیں دیتا۔ اکثر آپ نے سنا ہو گا کہ اگر کامیاب بننا چاہتے ہو تو کامیاب لوگوں کے ساتھ بیٹھا کرو۔ یہ تو بات ٹھیک ہے مگر کبھی اس بات پر غور کیا کہ کامیاب لوگ آپ کو ساتھ بٹھائیں گئے کیوں۔ ان کو کیا پڑی اپنی مصروف زندگی سے ٹائم نکال کر آپ پر ضائع کریں۔ مجھے یاد ہے 2011 میں میرے آن لائن کیرئر کے بالکل شروع کے دن تھے۔ بنک کی جاب چھوڑ چکا تھا اور اب مکمل زیرو بٹا زیرو تھا فنانشلی۔ مجھ سے اک کلائنٹ نے پوچھا کیا Dofollow Backlinks بنا لو گئے۔ اسوقت مجھے Seo کی الف بے کا بھی نہیں پتہ تھا۔ خیر میں نے کہا کر لوں گا تو اس نے کہا میں تم سے کچھ دنوں تک رابطہ کروں گا۔ وہ تو نہیں آیا پھر کبھی لیکن اس سارے چکر میں زندگی کا وہ سبق ملا جس نے پھر میری زندگی بدل ڈالی ۔ میں dofollow backlinks کے جاننے کے لئے اپنے استاد mentor کے پاس گیا۔ وہ ماشاءاللہ بہت اچھا کام کر رھا تھا۔ میں نے بہت پو چھا لیکن اس نے صرف ایک جواب دیا ” گوگل کر لو ” سو غصہ تو بہت آیا کہ اس نے اگنور کیا مگر میں نے یہ بات باندھ لی پلے سے کہ اسکی سائٹ کے مقابلے میں اپنی سائٹ رینک کروں گا۔ میں رائٹر بھی تھا اسکی ویب سائٹ کا۔ میں نے بہت مشکل سے دوہزار روپے اکٹھے کئے جن میں سے سولہ سو مجھے اسی نے دئیے تھے اور پھر ان سے CreativeOn کی ہوسٹنگ پرچیز کی اور ڈومین ساتھ میں مل گئی تھی Dailyto15.com اور تھیم میں نے site5.com سے فری لے لیا تھا۔ سو بس پھر میں تھا اور گوگل تھا بس اور پھر پورے تین ماہ بعد میں نے اپنی سائٹ اپنے مینٹور کی سائٹ سے اوپررینک کر دی۔ اور صرف بلاگ کمنٹس کر کر کے۔ ہزاروں کمنٹس کئے تھے مگر اپروو صرف چند سو ہی ہوئے تھے۔ جس دن میری سائٹ رینک ہوئ اسی دن میں پھر اس کے پاس گیا اور اسے کہا۔ ذرا یہ keyword تو سرچ کر۔ اس نے کیا تو اسے 6 نمبر پر اپنی سائٹ نظر آئ اور میری سائٹ اسے 3 نمبر پر رینک ملی۔ اسکو میری سائٹ کا پتہ نہیں تھا تب میں نے بڑے فخریہ انداز سے کہا ۔” استاد جی اے ویکھو۔ اے میری سائٹ اے ” ۔ اس نے حیرانی سے مجھے دیکھا بولا تم تو رائٹر تھے seo کس سے سیکھی۔ میں نے کہا سر جی آپ سے۔ اس دن اگر آپ مجھے یہ نہ کہتے کہ گوگل کر لو تو آج میں نے سائٹ رینک نہ کی ہوتی۔ بس یہ آپ کی اگنورنس کا اثر ہے پھر اس نے مجھے گلے لگایا اور کہا یار اس دن تجھے میں اگر سکھا دیتا تو تم نے سپون فیڈر بن جانا تھا اور ہر بات کے لئے منہ اٹھا کر میری طرف دیکھنا رھا۔ اب تم نے ریسرچ کی اور مجھے رزلٹ دکھایا اب کرتے ہیں مل کر کام کی بات۔ اس ساری کہانی کا مقصد یہ ہے کہ کامیاب لوگ بھی صرف کامیاب لوگوں کا ساتھ دیتے ہیں۔ چاہے یہ کامیابی چھوٹی ہی کیوں نہ ہو۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ میری طرح دوسرے لوگ آپ کو ساتھ ملائیں تو پہلے خود کچھ کر کے دکھائیں۔ گوگل یوٹیوب بھری پڑی ہے علم سے اسکو استعمال کریں کچھ اپنا کر کے دکھائیں پھر کوئ آپ کو اگنور کر کے تو دکھائے پھر نہ صرف آپ کو ریسپانس ملے گا بلکہ آپ کو لائیو شوز میں بھی بلایا جائے گا اور آپ کی سیلفی بھی اپنی وال پر لگائ جائے گی۔ سو مائنڈ سیٹ بدلیں اور کامیاب بنیں ۔ پوسٹ پسند آئے تو کمنٹ ضرور کئجئے گا آپکی کامیابی کا متمنی۔ زبیر چنیوٹی پوسٹ رائٹر : سر ادریس فاروق صاحب

zubair chinioti

Leave a Reply